منگل, جون 2, 2015

جدوجہد آزادی کشمیر کے قافلہ سالار سید صلاح الدین سے ایک ملاقات

1 تبصرے
سید صلاح الدین جدوجہد آزادی کشمیر کے قافلہ سالار ہیں ،ساری جوانی اسی دشت کی صحرائی میں گزار دی،ان کی زندگی کا ایک ہی مشن ہے کہ کشمیر آزاد ہوکر پاکستان کا حصہ بن جائے ،سری نگر کے رہنے والے اعلیٰ تعلیم یافتہ سید صلاح الدین نے دنیا کے ہر فورم پر کشمیریوں کا مقدمہ لڑا اور اس جدوجہد میں قید وبند کی صعوتیں بھی برداشت کیں ،گزشتہ 21سال سے پاکستان میں جلاوطنی زندگی گزار رہے ہیں ،جدوجہد آزدی کشمیر کی مرکزی تنظیم متحدہ جہاد کونسل کے سربراہ بھی ہیں ۔گزشتہ دنوں فیصل آباد تشریف لائے تو ایک نشست میں ان سے گفتگو کا موقع ملا ۔ان کی پاکستان سے بے پناہ محبت کا یہ عالم ہے کہ اپنی بات کو پاکستان سے شروع کرتے ہیں اور پاکستان پر آکر ہی ختم کرتے ہیں۔پاکستان کے بگڑتے ہوئے اندرونی حالات پر بے حد پریشان تھے مگر حالیہ دنوں میں مقبوضہ کشمیر کی گلیوں سبز ہلالی پرچم لہرائے جانے کی اطلاعات پر انتہائی خوش نظر آئے ۔انہوں نے کہا کہ مستحکم پاکستان مقبوضہ کشمیر کے عوام کی آرزو ہے،ہر روز سری نگر کی گلیوں میں پاکستانی پرچم لہرا کر مقبوضہ کشمیر کے عوام ایک نئی تاریخ رقم کر رہے ہیں ، کشمیر یوں نے سری نگر کی گلیوں بازاروں میں پاکستانی پرچم لہرا کر عوام نے عالمی اداروں کو پاکستان سے اپنی بے پنا ہ محبت اور وابستگی کا پیغام دیا ہے، آج بھی کشمیری ہر خوشی کے موقع پر پاکستان کا پرچم پورے کشمیر میں لہرا کر مناتے ہیں،16مئی کو پورے مقبوضہ کشمیر میں عوام نے ترنگا کی بجائے سبز ہلالی پرچم لہراکر بھارت کے چہرے پر کالک ملی ہے۔ پاکستان کی بقاء کشمیر کی آزدی سے وابستہ ہے،بھارت 68برس میں بھی فوجی طاقت اور کشمیریوں پر طرح طرح کے مظالم ڈھا کر ان کی آواز کو نہیں دبا سکا۔ بھارت نے پاکستان کے وجود کو ابھی تک تسلیم نہیں کیا وہ اکھنڈ بھارت کے نعرے لگاتاہے ۔ بھارت ہمارا ازلی و ابدی دشمن ہے جس نے اب تک پاکستان پر تین جنگیں مسلط کی ہیں اور 71 ء میں اس نے پاکستان کو دولخت کیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ سمیت دیگر عالمی اداروں نے بھارت کے مقبوضہ کشمیر پر غاصبانہ قبضہ ، کشمیریوں کے قتل عام اور وہاں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں پر آنکھیں بند کر رکھی ہیں اور کشمیریوں کو اقوا م متحدہ کی قرار دادوں کی منظوری کے بعد بھی ان کو حق خود ارادیت کے حق سے محروم رکھ کر یہ عالمی ادارے و عالمی طاقتیں برابر کی مجر م ہیں۔پاکستان کی موجودہ عسکری اور سیاسی قیادت کی تعریف کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ انتہائی خوش آئند ہے کہ کشمیر کے معاملہ میں پوری قیادت اور قوم یکسو ہے ،اب اقوام متحدہ بھی اپنی قراردودوں پر عمل در آمد کرواتے ہوئے کشمیریوں کو بھارت سے حق خود ارادیت لے کر دے،متحدہ جہاد کونسل کو دہشت گرد قرار ددلوانے کے لئے یو این او جانا مودی سرکارکی ناکامی کا اعتراف ہے ہم مذاکرات کے مخالف نہیں مگر بھارت مذاکرات کے نام پرجہاد کشمیر کوسبوتاژ کرنا چاہتا ہے ۔۔انہوں نے کہا کہ بھارت سے تجارت اور غیر مشروط دوستی کا دم بھرنے والے شہداء کشمیر کے مجرم ہیں۔آج بھی کشمیری نوجوان’’ کشمیر بنے گا پاکستان‘‘ کا نعرہ لگا کر سینے پر گولیاں کھا رہے ہیں،کشمیر میں 6ہزار اجتماعی قبریں ساڑھے پانچ لاکھ افرد شہید،ہزاروں خواتین کی عصمت دری اور اب تک کشمیریوں کی اربوں روپے کی املاک بھارتی قابض فوج کے ہاتھوں تباہ ہو چکی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ قائد اعظم کے فرمان کے مطابق کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے جبکہ بھارت پاکستان کی شہہ رگ سے خون چوس رہا ہے۔بھارت کشمیر میں بیٹھ کر پاکستان کی طرف بہنے والے دریاوں کا رخ اپنی جانب موڑ کر پاکستان کر بنجر کردینے کے منصوبے کی تکمیل کے قریب پہنچ چکا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ورکنگ باؤنڈری پر دیوار برلن کی طرز پر 145کلو میٹر طویل دیوار برہمن کی تعمیر بھارتی پاکستانی حکومت کے دوستی کے خواب کو چکنا چوراور بین الاقوامی و بنیادی انسانی حقوق کی پامالی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کے مقبوضہ کشمیر پر ناجائز تسلط کے خلاف یک آواز ہو کر جس جدوجہد کو وہ لے کر چل رہے ہیں ، انشاء اللہ ایک دن ان کی یہ کوششیں رنگ لائیں گی اور انہیں جلد آزادی نصیب ہو گی۔انہوں نے کہا کہ بھارت مذاکرات کے نام پر عالمی قوتوں کو دھوکہ دے رہاہے ،مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوام متحدہ کی قرادادوں پر عمل درآمد کرتے ہوئے مظلوم کشمیریوں کا حق خود ارادیت دینا ہے ،پاکستان سے محبت کشمیریوں کے خون کا حصہ ہے ، پاکستان کی عسکری اور سیاسی قیادت کا مسئلہ کشمیر پر ٹھوس موقف سے کشمیریوں کے حوصلے بلند ہوئے ہیں ،وہ دن دور نہیں جب کشمیر آزاد ہو کرپاکستان کا حصہ بنے گا ۔سید صلاح الدین نے کہا کہ بھارت ،اسرائیل اور امریکہ عالم اسلام کے سب سے بڑے دشمن ہیں اور امت مسلمہ کو پارہ پارہ کرنے کی سازشوں میں مصروف ہیں ، پاکستان میں عدم استحکام پیدا کرکے اس کے ایٹمی وسائل پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں لیکن مجاہدین کشمیر ایسی کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کاخون اتنا سستا نہیں کہ آلو، پیاز اور ٹماٹر کی تجارت کے لیے اس کو فراموش کر دیا جائے ۔
تصویر بشکریہ : شاہدمحمود
.